Here is what others are reading about!

  • Home
  • /
  • Tag Archives:  غربت

وہ بیڈ ڈینگی والوں کے لئے ہے

کچھ عرصہ قبل میں نے ایک آرٹیکل بعنوان  ” ٹکر” (http://bit.ly/1VEvxmd)  لکھا تھا۔   “ٹکر” میں غلام حسین نامی ایک محنت کش کا ذکر تھا جو بہاولپور سے اپنے پورے خاندان سمیت راولپنڈی آکر آباد ہو گیا تھا اور وہ اور اس کی بیوی لوگوں کے گھروں میں کام کر کے گزر اوقات کرتے تھے۔ ان…

آزاد غلام

پاکستان عالم وجود میں آتے ہی آزاد ہو گیا تھاـ ہندوستان بھی آزاد قرار پایا.لیکن انسان ان دونوں مملکتوں میں غلام تھاـتعصب کا غلام مذھبی جنون کا غلام حیوانیت و بربریت کا غلام. یہ اقتباس منٹو کی تحریر آزاد غلام میں سے ہے. آزاد غلام کی یہ اصطلاح منٹو نے دونوں ممالک کے عوام کیلئے…

پاکستان جھومر پارٹی

یہ پارٹی کسی تعارف کی محتاج نہیں،اور اگر تھی بھی تو اب محتاج نہیں رہے گی۔یہ پارٹی اپنی جن خصوصیات کی وجہ سے پوری دنیا میں جانی پہچانی جاتی ہے  وہ مختصر طور پر یہ  ہیں: اس پارٹی کے ارکان نہ صرف ‘سو میل’ دور سے چمکتےہوئے بوٹ دیکھ سکتے ہے  بلکہ غائبانہ طور پہ…

گھنٹیاں

سلیم احمد خان المعروف سیٹھ صاحب ہماری کمپنی کے مالک تھے۔   “سلیم  احمد خان” انکا والدین کی جانب سے  اور “سیٹھ صاحب” ہم ملازمین کی جانب سے رکھا گیا نام تھا۔ سیٹھ صاحب  میرے آئیڈئیل تھے۔ خوش لباس،  منطم، نفیس ، معاملہ فہم اور عقاب کی سی نگاہ رکھنے والا شخص۔کاغذوں کے ڈھیر میں اس…

مزدور

دکان میں داخل ہوتے ہی انہوں نے اونچی ایڑھی والی جوتیوں کے ریک کا رخ کیا. عید کے باعث دکان عورتوں سے کچھا کچھ بھری ہوئی تھی. کافی دیر انتظار کے بعد بھی کسی دکاندار نے انکی جانب دھیان نہ دیا… وجہ نہ جانے رش سے بھری دکان تھی یہ انکے ‘کالے برقعے’… بہرحال مارے…

ٹیڑھے کھمبے اور گبر سنگھ

نئی سڑکیں ، بڑے پولز اور ان سے لٹکے ہوئے  سیکیورٹی کیمرے۔۔ سب اچھا لگتا ہے۔ لیکن نہ جانےانہیں نصب کرنے والے  انجینئرز اپنے ساتھ پارے والا لیولر کیوں نہیں رکھتے جیسا کہ خدا بخش اپنے ساتھ رکھتا ہے۔ تریسٹھ سالہ خدا بخش پیشے کے لحاظ سے تو مالی ہے لیکن با رعب اور ٹھسے…

چھوٹے لوگ

آپ ایک ایسے معاشرے کی پیداوارہیں جہاں آپ اٹھارہ اور بیس جماعتیں پڑھ کر بھی اپنی فطرت کو نہیں بدل سکتے اپکے اندر وہی انا کا مارا انسان پلتا رہتا ہے جو کہ کسی کو عزت نہیں دے سکتا ـــــ آپ  کی اپنے گھر کام کرنے والوں پر، وہ کام کرنے والے جو کہ آپکی…

آپ بڑے ہو کر کیا بنیں گے؟

میں ایک پرائمری اسکول ٹیچر ہوں ۔ ہمارے گورنمنٹ پرائمری اسکول مواچھ گوٹھ میں آج اُردو کا پرچہ تھا ۔ میری ڈیوٹی پانچویں جماعت یعنی جماعت پنجم کے طلبہ پر تھی ۔ جماعت پنجم کو برآمدے میں جگہ ملی تھی ۔ میں احتیاطی تدبیر کے طور پر برآمدے کے ایک ایسے کونے میں کھڑا تھا…

ہیرو کی ترسی ہوئی قوم

میرا قلم بھی شاید اس قوم کے ہر سپوت کی طرح سو رہا تھا، اور اسے بھی جاگنے کے لیے کسی حادثے، کسی سانحے، کسی موقع کا انتظار تھا – میری قوم کو ملنے والے نئے تمغوں، نئے القابات میں ایک اور اضافہ کر لیں.. ہم ہیں ہیرو کو ترسی ہوئی قوم. جی یہ قوم…

پڑی رہنے دو انسانوں کی لاشیں

سڑک کے کنارے ڈھابے پر بیٹھے یہ اسکی تیسری چائے تھی۔  اب رش کم ھو چکا تھا۔  گاڑیاں کم ہوتی جا رہی تھیں اور ہوا ہلکی ہلکی سرد سسکیاں لینے لگی تھی۔ ٹیبل پر رکھی ڈبی میں اب  بھی چارسگریٹ باقی تھے۔ ایک سگریٹ سلگایا اور  سڑک کے پار چار منزلہ ہاسٹل کو اوپر سے…

123
Got It!

اس ویب سائٹ کا مواد بول پلاٹون کی آفیشل رائے کی عکاسی نہیں کرتا. مضامین میں ظاہر معلومات اور خیالات کی ذمہ داری مکمل طور پر اس کے مصنف کی ہے