Here is what others are reading about!

  • Home
  • /
  • Tag Archives:  Dreams

آزادی مبارک

آج یوم آزادی ہے۔ آزادی ایک نعمت ہے ۔ جس پر ہر فرد کا یکساں حق ہے۔ مجھے بھی کچھ بہی خواہوں نے یوم آزادی کی مبارکبا د دی ہے۔ ان سب احباب کا شکریہ۔میں بھی کچھ لوگوں کو اس خوشی میں شریک کرنا چاہتا ہوں۔ استحصالی قوتوں اور طبقاتی تقسیم کے ذمہ داروں کویوم…

دھرتی کا نوحہ

اے!  راہِ حق کے شہیدو وفا کی تصویرو تمھیں وطن کی ہوائیں سلام کہتی ہیں 70 سال پرانا ریڈیو آج بھی پوری شان کے ساتھ یہ نغمہ بجا رہا ہے۔ جس بابے کا ریڈیو ہے اسکی بھی مجھے سمجھ نہیں آتی ارے! بھلا اسے کسی میز پر رکھ چھوڑے تو میرے سر پہ ان نغموں…

ابھی پاکستان بننا باقی ہے

اسکے سائیڈ ٹیبل پرایش ٹرے میں کچھ بجھے ہوئے سگریٹ پڑے تھے اورایک جل رہا تھا۔۔۔ ساتھ ہی کتابوں کا ایک ڈھیر لگاتھا جو یہ گواہی دے رہا تھا کے وہ خاصا بگڑا ہوا آدمی ہے۔۔۔ اس نے رعشہ زدہ ہاتھوں سے ا ایک  ڈائری اٹھائی۔۔۔  اس کے سر ورق پر مٹی جمی تھی۔ اس…

دینے کو کچھ نہیں، یہ پرچم تمہارا ہوا…

شہید کیمرامین شہزاد خان کے اہل خانہ سے تعزیت کرنے کے لئے آنے والے کمانڈر سدرن لیفٹیننٹ جنرل عامر ریاض جب پہنچے تو شہزاد خان کی ننھی پری کو نہ تو تعزیت کرنے والوں کے آنے کا مقصد سمجھ آیا نہ ہی انکے منہ سے نکلے روایتی افسوس کے الفاظ، وردی اس کے لئے نئی…

غیرت مند معاشرے کی ایک جھلک

 “بڑا آیا مجھے مارنے والا” یه ایک نڈر بہن کا خیال تھا۔ بہن کے اس خیال کو غیرت مند بھائی نے گلا گھونٹ کر زمین کے چھ گز نیچے پہنچا کر حقیقت کا روپ دے دیا۔ بہت سن لیا که قندیل بری عورت تھی، بے حیا، بے باک، بدکردار، بد چلن ،بے غیرت،آوارہ مزاج اور…

چھوٹے لوگ

آپ ایک ایسے معاشرے کی پیداوارہیں جہاں آپ اٹھارہ اور بیس جماعتیں پڑھ کر بھی اپنی فطرت کو نہیں بدل سکتے اپکے اندر وہی انا کا مارا انسان پلتا رہتا ہے جو کہ کسی کو عزت نہیں دے سکتا ـــــ آپ  کی اپنے گھر کام کرنے والوں پر، وہ کام کرنے والے جو کہ آپکی…

آپ بڑے ہو کر کیا بنیں گے؟

میں ایک پرائمری اسکول ٹیچر ہوں ۔ ہمارے گورنمنٹ پرائمری اسکول مواچھ گوٹھ میں آج اُردو کا پرچہ تھا ۔ میری ڈیوٹی پانچویں جماعت یعنی جماعت پنجم کے طلبہ پر تھی ۔ جماعت پنجم کو برآمدے میں جگہ ملی تھی ۔ میں احتیاطی تدبیر کے طور پر برآمدے کے ایک ایسے کونے میں کھڑا تھا…

ضمیر

نیم اندھیرے کمرے میں، ساکت لمحوں میں موجود جلتے ہوئے،ساکت فضا میں معلق مدھم بلب کی ٹمٹماتی روشنی میں لکھ لکھ کر اس عمر رسیدہ بوڑھے کے لاغر، استخوانی اور رعشہ زدہ ہاتھ دُکھے جاتے ہیں لیکن کیا کرے کہ اس کا یہ لکھنا اب اس کی آخری ہچکیاں لیتی نیم مردہ سانسوں کی روانی…

پسینہ

وہ اچھلتی کودتی ہاتھ میں موجود اماں کے دیئے پیسوں سے کھیلتی ہوئی گھر سے نکلی تھی پھر محلے میں رک کر اپنی سہیلیوں کے ساتھ بیٹھ کر مٹی کے کھلونے بنانے میں مگن ہو گئی کہ اچانک کھلونے بناتے ہوئے اسے خیال آیا کہ وہ تو گھر سے روٹیاں  لینے نکلی تھی۔ گرمی کی…

123
Got It!

اس ویب سائٹ کا مواد بول پلاٹون کی آفیشل رائے کی عکاسی نہیں کرتا. مضامین میں ظاہر معلومات اور خیالات کی ذمہ داری مکمل طور پر اس کے مصنف کی ہے